یورپ دوبارہ صلیبی جنگیں شروع کرنا چاہتا ہے، ترک صدر رجب طیب اردوان

ترکی کے صدر رجب طیب اردوان نے یورپ اور بالخصوص فرانس میں بڑھتے ہوئے اسلاموفوبیا سے متعلق کہا ہے کہ یورپ ایک بار پھر صلیبی جنگیں شروع کرنا چاہتا ہے۔

اردوان انقرہ میں اپنی جماعت جسٹس اینڈ ڈیولپمنٹ پارٹی کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ میں ان لوگوں کے بارے میں کچھ کہنا بھی پسند نہیں کرتا جنھوں نے پیغمبر ﷺ کی شان میں گستاخی کی جسارت کی۔ ہم وہ قوم ہیں جو نہ صرف اپنی مذہبی اقدار کا احترام کرتے ہیں بلکہ دیگر مذاہب کی اقدار کا احترام کرتے ہیں لیکن ہماری اقدار کو مسلسل نشانہ بنایا جارہا ہے۔انہوں نے کہا کہ آزادی اظہار مذہبی مقدسات کی گستاخی سے تعلق نہیں رکھتی، وہ جو چاہیں کریں ہم اپنے حق سے پیچھے نہیں ہٹیں گے۔ترک صدر نے کہا کہ یورپ نے اب ہماری قدروں کو براہ راست نشانہ بنانا شروع کردیا ہے اور اب تو وہ اسلام کے خلاف اپنی نفرت کو چھپانے کی ضرورت بھی محسوس نہیں کرتے۔

واضح رہے کہ فرانس میں اسلام اور مسلمانوں کے حوالے سے مسلسل نفرت انگیز بیانات اور اقدامات سامنے آرہے ہیں جبکہ گزشتہ ماہ چارلی ہیبڈو کی جانب سے ایک مرتبہ پھر توہین آمیز خاکوں کی اشاعت اور حمایت کے بعد سے مسلم ممالک میں احتجاج کا سلسلہ جاری ہے جبکہ فرانسیسی مصنوعات کا بھی بائیکاٹ کردیا گیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں