کراچی میں نوکریاں سندھودیش کے لو گوں کیلیے ہیں ، خالد مقبول

ایم کیو ایم پاکستان کے رہنماء خالد مقبول صدیقی نے کہا کہ سندھ حکومت سے کوئی بھی مطالبہ منہ پر کالک ملنے کے مترادف ہے۔

خالد مقبول صدیقی نے شادی ہال مالکان کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ سندھ حکومت نے شہری علاقوں کے ایک فیصد نوجوانوں کو بھی نوکری نہیں دی گئی، کراچی میں سندھودیش کے لوگوں کو بلاکر نوکریاں دی جارہی ہیں۔خالد مقبول صدیقی نے سندھ حکومت سے مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ کراچی کے لوگوں پر مسلط کیے گئے تمام سندھو دیش والوں کو واپس لے جائیں، یہ پاکستان ہے یہاں بدمعاشی قبول نہیں کی جائے گی۔سندھ حکومت کی جانب سے صرف سندھ کے شہری علاقوں کراچی، میرپورخاص، نوابشاہ اور حیدرآباد جو پورے ملک کو پال رہے ہیں وہاں پابندیاں لگائی جارہی ہیں۔ ہم پاکستان کی محبت ميں کمزور پڑ رہے ہيں۔سندھ حکومت کو ٹاسک ديا گيا ہے کہ تاجروں کو تنگ کيا جائے، کراچی کے ذريعے پاکستان کو لوٹنے کی مذمت کرتے ہيں۔ کراچی کا شہری اپنے حصے سے زيادہ ٹيکس ديتا ہے۔ کرونا کےعذاب کو بھی بھتے اور پيپلزپارٹی فنڈ کيلئے استعمال کيا جارہا ہے۔صوبائی حکومت کی جانب سے کرونا کے نام پر تمام پابندیاں کراچی میں لگارہی ہے، پورا سندھو دیش کھولا ہے پاکستان بند ہے کوئی وہاں دکان بند نہیں ہورہی۔ سندھ حکومت کیخلاف مزاحمتی تحريک چلائيں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں