سندھ میں مارکیٹیں رات 8 بجے تک کھلی رکھنے کی اجازت

تاجروں کی دھمکی کام کر گئی، سندھ حکومت نے مارکیٹیں رات 8 بجے تک کھلی رکھنے کی اجازت دیدی۔ مرتضیٰ وہاب کا کہنا ہے کہ امید ہے مارکیٹ ایسوسی ایشنز کرونا وائرس سے بچاؤ کی ایس او پیز پر عمل کرائیں گی۔

کراچی کے تاجروں نے مارکیٹوں کے اوقات کار میں تبدیلی کیلئے 72 گھنٹے کا الٹی ميٹم دیتے ہوئے مطالبات نہ ماننے پر حکومت کیخلاف سڑکوں پر آنے کی دھمکی دی تھی۔سندھ حکومت نے کرونا وائرس کے پھیلاؤ کے باعث کراچی سمیت صوبہ بھر میں تجارتی مراکز، مارکیٹیں اور شاپنگ مالز شام 6 بجے بند کرنے کا حکم دیا ہے جبکہ نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر نے ملک بھر میں کاروبار کیلئے رات 10 بجے تک کی اجازت دی تھی۔صدر آل کراچی تاجر اتحاد عتیق میر نے کاروباری مراکز 6 بجے بند کرنے سے متعلق حکومتی فیصلے پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا تھا کہ مارکیٹوں کے اوقات کار تبدیل نہ ہوئے تو ہم سڑکوں پر نکليں گے، حکومت نے 3 دن میں فیصلہ واپس نہ لیا تو احتجاج کریں گے، اس شہر کو تباہ کرنے کی سازش کی جارہی ہے جسے ناکام بنادیں گے۔سندھ حکومت نے تاجروں کی جانب سے احتجاج کی دھمکی اور تین روز کا الٹی میٹم دینے کے بعد مطالبہ مان لیا۔ صوبہ بھر میں مارکیٹیں رات 8 بجے تک کھلی رکھنے کی اجازت دیدی۔سندھ حکومت کے ترجمان مرتضیٰ وہاب نے اپنے ٹویٹر پیغام میں بتایا کہ تاجروں کو مارکیٹیں رات 8 بجے تک کھلی رکھنے کی اجازت دیدی، تاہم امید ہے کہ مارکیٹ ایسوسی ایشنز کرونا وائرس سے بچاؤ کیلئے طے شدہ ایس او پیز پر عمل کرائیں گے۔

سندھ میں آج کرونا وائرس سے مزید 19 افراد جاں بحق ہوگئے جبکہ تقریباً 4 ماہ بعد 1400 سے زائد نئے کیسز کی تصدیق ہوئی ہے، کراچی میں 5 ماہ بعد کرونا وائرس کے 1100 سے زائد کیسز رپورٹ ہوئے ہیں، صوبہ بھر میں مہلک وباء سے اموات 2885 تک پہنچ گئیں۔سندھ حکومت کی جانب سے کاروباری مراکز، شاپنگ مالز اور مارکیٹیں 6 بجے بند کرنے کے فیصلے پر ایم کیو ایم پاکستان کے رہنماء ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی اور پاکستان تحریک انصاف کے سندھ اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر فردوس شمیم نقوی نے بھی کڑی تنقید کی تھی۔

sindh buisness close timing in crona covid

اپنا تبصرہ بھیجیں