بھارتی فوج کی ایل او سی پر بلا اشتعال فائرنگ

سرینگر: (این پی پی) مقبوضہ کشمیر میں بھارت کی بربریت جاری ہے، غاصب فوج نے ضلع پونچھ میں دو کشمیری نوجوانوں کو شہید کر دیا۔

مقبوضہ وادی کے ضلع پونچھ کے علاقے ڈوگران میں قابض فوج نے سرچ آپریشن کی آڑ میں 2 نوجوانوں کو شہید کیا اور ایک نوجوان کو گرفتار بھی کر لیا گیا۔ علاقے میں انٹرنیٹ اور موبائل سروس بند کر دی گئی جبکہ بھارتی فوج گشت کر کے خوف و ہراس پھیلاتی رہی۔ ظالمانہ کارروائی کے خلاف کشمیریوں نے شدید احتجاج کیا۔ واضح رہے کہ مودی حکومت نے مقبوضہ کشمیر میں دُنیا کی تاریخ کا طویل ترین لاک ڈاون نافذ کر رکھا ہے جس کے دوران انسانی حقوق کی بدترین پامالیاں جاری ہیں۔ 90 لاکھ کشمیری طویل عرصے سے قید کے سبب معاشی مسائل کا شکار ہیں جبکہ ان کو خوراک سمیت بنیادی ضروریات زندگی کے حصول میں بھی شدید مشکلات کا سامنا ہے۔
راولپنڈی: بھارتی فوج کی لائن آف کنٹرول (ایل او سی) پر بلا اشتعال فائرنگ سے ایک شخص شدید زخمی ہوگیا۔

آئی ایس پی آر کے مطابق بھارتی فوج نے چری کوٹ سیکٹر پر فائرنگ کی اور دانستہ سویلین آبادی کو نشانہ بنایا۔ بھارتی فوج کی فائرنگ سے 45 سالہ شخص شدید زخمی ہوگیا جسے مقامی اسپتال منتقل کیا گیا جہاں اسے طبی امداد دی جارہی ہے۔ رواں برس بھارت 2800 سے زائد مرتبہ سیز فائر معاہدے کی خلاف ورزی کرچکا ہے جس سے رواں سال درجنوں معصوم شہری شہید جبکہ 250 سے زائد زخمی ہوئے ہیں، بھارت کی جانب سے معصوم شہریوں کو جان بوجھ کر نشانہ بنانا قابل مذمت اور 2003 کےجنگ بندی انتظام کی خلاف ورزی ہے۔ دفتر خارجہ کے مطابق بھارت کی اشتعال انگیزی خطے میں امن و سلامتی کے لیے خطرہ ہے اور وہ ان حرکتوں سے مقبوضہ کشمیر کی صورتحال سے دنیا کی توجہ نہیں ہٹا سکتا، بھارت اقوام متحدہ سلامتی کونسل کی قراردادوں پر عمل درآمد اور 2003 کے جنگ بندی انتظام کی پاسداری کو یقینی بناتے ہوئے اقوام متحدہ فوجی مبصر مشن کو ایل او سی پر کام کرنے کی اجازت دے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں